سرفراز دھوکہ نہیں دے گا

آفریں ہے ان دانشو(ڑ)وں پر جو آج بھی پہلے سرفراز کو عماد وسیم پر اعتماد کرنے پر کوستے رہے اور پھر پانڈیا کے چھکے مارنے پر کوسنا شروع ہوگئے، ان کی نفسیات کو سمجھنا ہوگا یہ وہ لوگ ہیں جو اندر سے دعائیں کرتے ہیں کہ پاکستان میچ ہار جائے تو اپنے اندر کا گند باہر نکال سکیں۔
تھوڑا دھیان دیں، سرفراز وہ کھلاڑی ہے جس کی کپتانی میں پاکستان پہلے انڈر نائنٹین ورلڈ کپ جیت چکا ہے، ٹی ٹوئینٹی ٹیم کی کپتانی ملی تو وہاں بھی فتوحات حاصل کیں۔
پچھلے دو سال سے اظہر کی کپتانی میں ٹیم بد ترین رینک تک جا پہنچی، بنگلہ دیش سے کلین سویپ ہوئے، مڈل ایسٹ ہو یا دنیا میں کوئی اور ملک ہم ہر ٹیم سے ون ڈے ہارے اور ایسے میں ٹیم دی گئی سرفراز کو، جس کے حوصلے کو داد دینا بنتی ہے۔
فخر زمان، فہیم اشرف، رومان رئیس کو چیمپئنز ٹرافی جیسے ٹاپ ٹورنامنٹ میں ون ڈے کیپ دی گئی۔
آج بھی جب پاکستان ایک بہتر ٹوٹل کی طرف گامزن تھا اور وہ خود بہتی گنگا میں ہاتھ دھو سکتا تھا تو اس نے عماد وسیم پر بھروسہ کیا کہ وہ سرفراز سے زیادہ بہتر ہارڈ ہٹر ہے، اور جب بالنگ میں تین وکٹٹیں حاصل ہوگئیں تو شاداب کو تیرھویں اوور میں متعارف کروا کر نوجوان کھلاڑی پر اپنے بھروسے کو ظاہر کیا۔
سرفراز پر الزام ہے کہ وہ غصہ کرتا یے، کونسا پاکستانی کپتان غصہ نہیں کرتا تھا؟ جدید کرکٹ میں عمران سے لیکر وسیم و وقار سب ہی غصہ کرتے رہے ہیں اور کامیاب بھی رہے ہیں، لیکن جس طرح سرفراز نوجوان کھلاڑیوں پر میچ کھیلتا ہے یہ اس کا خاصہ ہے، پی ایس ایل کے دو فائنل سرفراز کی کپتانی کے دم بھرنے کے لیے کافی ہیں۔
اب آپ کچھ بھی کہیں ہم تو کہیں گے سرفراز دھوکہ نہیں دے گا۔
پاکستان زندہ باد

تبصرہ کریں

Loading Facebook Comments ...

تبصرہ کریں