ایک اور سنجیدہ، عظیم کھلاڑی کا ریٹائرمنٹ کا اعلان

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور ٹیسٹ کرکٹ میں ملک کے لیے سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز یونس خان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے بعد بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔

کراچی میں ایک پریس کانفرسن کے دوران یونس خان نے اپنے مداحوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنی طرف سے اپنے ملک کی بہترین خدمت کرنے کی کوشش کی اور ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں میری آخری سیریز ہوگی جہاں میں اپنی ٹیم کی فتح کے لیے بہترین کوشش کروں گا۔

سابق کپتان نے کہا کہ میں نے کوشش کی کہ آج میں کرکٹ چھوڑ کے جارہاہوں تو میرا سر بلند ہو، اور انسان ہر وقت فٹ نہیں رہتا اس لیے ہم سب کے لیے اور خاص کر یونس خان کے لیے بہتر ہوگا کہ وہ فیلڈ چھوڑ دے۔

انھوں نے کہا کہ ایسا نہیں ہے کہ میں فیلڈ چھوڑوں گا تو چلاجاؤں گا بلکہ میں یہی آپ کے ساتھ ہوں اور مجھے امید ہے کہ آپ میرا ساتھ دیں گے اور جب آپ کو ضرورت ہوگی تو میں آپ کے ساتھ ہوں گا۔

یہ بھی پڑھیں: موجودہ عہد کے کھلاڑیوں میں یونس خان کا مقام

ان کا کہنا تھا کہ میں نے اپنی پوری کوشش کی کہ اپنے ملک کو ایک اچھا سفیر بن کر آگے لے جانے کی کوشش کی اور اگر اس حوالے سے مجھ سے جو غلطیاں ہوئی ہیں ان کو نظر انداز کریں۔

سابق کپتان نے کہا کہ یہ فیصلہ سوچ سمجھ کر کیا اور انگلینڈ کے خلاف سیریز کے بعد ارادہ تھا لیکن میرے چند دوستوں نے روکا اور جس طرح میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ آیا ہوں اس کی وجہ بھی یہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ جب جاوید میانداد کا سب سے زیادہ رنز کا ریکارڈ توڑا تھا تو اس وقت بھی کنارہ کشی کا سوچا تھا پھر 10 ہزار رنز بنانے کی طرف جانے کی بات کی گئی اس لیے جاری رکھا اور اب یہاں پر اعلان کرنے کا ایک مقصد یہی ہے کہ ٹور میں جاکر اعلان کروں تو پھر وہاں سے 11 ہزار یا 12 ہزار رنز بنانے کا سوچوں تاہم میری عمر ایسی نہیں ہے کہ میں مزید 5 سال کھیل سکوں اس لیے ریٹائرمنٹ کا یہ بہتر وقت ہے۔

یہ بھی پڑھیں: آسٹریلیا کے خلاف کئی ریکارڈز چکنا چور

یونس خان کا کہنا تھا کہ میں نے جارحانہ انداز میں کھیلنے کی کوشش کی اس لیے میں نے اپنے کریئر میں جو غلطیاں کی ہیں اس کو نظر انداز کریں۔

انھوں نے کہا کہ ایک بندے کی سوچ چیزوں کو آگے لے کر جاسکتی ہے اور سرفراز احمد کے پاس موقع ہے کہ وہ پاکستان کرکٹ کو آگے لے کر جائے اور میرے خیال میں اگر ایسی سوچ رکھی جائے تو یونس خان یا کسی اور کھلاڑی کے جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

تبصرہ کریں

Loading Facebook Comments ...

تبصرہ کریں