ایرانی جوہری طاقت کے خلاف امریکہ اسرائیل پھر متحد

واشنگٹن : امریکا کے نئے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایران کو کبھی جوہری ہتھیار بنانے کی اجازت نہیں دیں گے۔

اسرائیلی وزیراعظم کی وائٹ ہاؤس آمد پر ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کی اہلیہ نے بینجمن نیتن یاہو اور ان کی اہلیہ کا خیرمقدم کیا جبکہ اسرائیل کے ساتھ مضبوط تعلقات کو دہرایا۔

ایران اور 6 عالمی قوتوں کے درمیان ہونے والی نیوکلیئر ڈیل پر اسرائیلی وزیراعظم کے خدشات کا جواب دیتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا اسرائیل کو بے شمار سیکیورٹی چیلنجز کا سامنا ہے، جن میں سے ایک ایران کے جوہری ہتھیار بنانے کا خدشہ بھی شامل ہے۔

امریکی صدر کے مطابق آج تک جتنے بھی معاہدے طے پائے، ان میں سے بدترین ایران سے طے ہونے والا معاہدہ ہے، میری انتظامیہ ایران پر نئی پابندیاں عائد کرچکی ہے جبکہ میں ایران کو جوہری ہتھیار تیار کرنے سے روکنے کے لیے مزید اقدامات کروں گا۔

خیال رہے کہ جولائی 2015 میں ایران اور 6 عالمی قوتوں کے درمیان طے پانے والا معاہدے پر عملدرآمد 2016 سے شروع ہوا۔

اس معاہدے کے تحت ایران نے اپنے جوہری پروگرام کو روکنے پر رضامندی کا اظہار کیا تھا اور توانائی کے حصول کے لیے جوہری مواد کے استعمال کو بین الاقوامی جانچ کے حوالے کردیا تھا۔

تاہم اسرائیلی وزیراعظم سمیت اس معاہدے کے ناقدین اصرار کرتے ہیں کہ جب آئندہ 10 سے 15 سال میں اس کی میعاد ختم ہوجائے گی تو تہران ایک بار پھر جوہری ہتھیار بنانے کا اختیار حاصل کرلے گا۔

تبصرہ کریں

Loading Facebook Comments ...

تبصرہ کریں